شہباز شریف کا گرفتاری کے بعد پہلا بیان

لاہور: نیب نے آج منی لانڈرنگ کیس میں اپوزیشن لیڈر شہباز شریف کو گرفتار کر لیا ہے۔شہباز شریف نے وکلاء سے مختصر گفتگو کی۔ اپوزیشن لیڈر شہباز شریف نے گرفتاری کے بعد ریمارکس دیتے ہوئے کہا ہے کہ مجھے انتقام کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔شہباز شریف نے مزید کہا کہ مجھے یہاں نہیں تو بعد میں انصاف ملے گا۔شہباز شریف نے موقع پر موجود ن لیگ کے سینئر رہنماؤں کو کہا کہ آپ میری گرفتاری پر بھرپور ردِعمل دیں۔

شہباز شریف نے کہا کہ آج آپ 4 بجے اس حوالے سے مکمل ردعمل دیں۔دوسری جانب پاکستان مسلم لیگ ن کی ترجمان مریم اورنگزیب کا کہنا ہے کہ شہباز شریف کو نیب نیازی گٹھ جوڑ نے گرفتار کیا۔جن لوگوں نے پاکستان کی خدمت کی انہیں نشان عبرت بنایا جا رہا ہے۔

ضرور پڑھیں   پھل فروش ، کریانہ اسٹور اور دودھ فروش بھی ’شاپر‘ استعمال نہیں کرسکتے

گذشتہ دو سال سے نیب نیازی گٹھ جوڑ اپوزیشن کی آواز کو دبانا چاہتا ہے۔ عمران خان کے حکم پر آج نیب نے شہباز شریف کو گرفتار کیا۔

پی ٹی آئی کی غیر ملکی فنڈنگ پر کوئی سوال نہیں اٹھاتا،ہر مخالف کی آواز کو بند کیا جا رہا ہے۔مسلم لیگ ن کی قیادت دلیر اور بہادر ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ عدالت کے فیصلے کو قبول کرتے ہیں۔عمران خان کی ہمشیرہ اور معاونین خصوصی پر سنگین الزامات ہیں، انہیں نہیں بلایا جاتا۔ اربوں کھربوں کھانے والوں کو کوئی نہیں پوچھتا،پی ٹی آئی حکومت نے گلگت بلتستان کے الیکشن میں دھاندلی کا فیصلہ کر لیا ہے۔

ضرور پڑھیں   نوازشریف کو سزا سے نئے پاکستان کا آغاز ہوگیا،عمران خان

شہباز شریف کی گرفتاری اے پی سی کا ری ایکشن ہے۔عمران خان اور چئیرمین نیب نے ہمیشہ ہمیں ڈرانے کی کوشش کی۔ان بزدلوں کی وجہ سے ہم گھبرانے والے نہیں۔شہباز شریف کی گرفتاری اے پی سی کو مفلوج کرنے کی کوشش ہے۔اپوزیشن کو تمام متحدہ اپوزیشن لیڈ کرے گی۔مریم اورنگزیب نے مزید کہا کہ آج 22 کروڑ عوام کو ہتھ کڑی لگائی گئی ہے۔