ڈویثرنل کنزرویٹربہاول پورجنگلات محمد سعید تبسم کاوضاحتی بیان جاری

بہاول پور
ایم اقبال انجم سے
ڈویثرنل کنزرویٹرمحکمہ جنگلات بہاول پورمحمد سعید تبسم نے کہا ہے کہ نیشنل پارک لال سوہانرامیں ڈی ایف اورانا مشتاق احمد ٹمبرچوری اور لکڑی چوری کی وارداتوں پر قابو پاچکے ہیں کرپٹ عملہ کے خلاف کاروائی بھی جاری ہے جن ملازمین کو ملازمت سے برطرف کیاگیاتھا انہیں کورٹ نے بحال کیا ہے ہم نے ان کی انکوائری شروع کرارکھی ہے محکمہ عدالت کے فیصلوں کی حکم عدولی نہیں کرسکتا،انہوں نے کہا کہ اگر کسی کی کسی فاریسٹ گارڈ یا بلاک افسر سے زاتی لڑائی ہے تو ان کے خلاف تھانے میں جائیں اور کاروائی کرائیں محکمے کا کسی کی زاتی جھگڑے سے کوئی تعلق نہ ہے،انہوں نے کہا کہ میں ڈویثرنل کنزرویٹرہوں میرے پاس آنے والی شکایات کا بروقت نوٹس لیتا ہوں اور محکمانہ کاروائی کی جاتی ہے اگرنیشنل پارک کاسرکاری ملازم بدعنوانی میں ملوث ہوتا ہے تو میں اس کی انکوائری کراتا ہوں قصور وار چابت ہونے پر اس کے خلاف کاروائی کی جاتی ہے انہوں نے کہا کہ میں نے جب سے بہاول پور کا چارج سمبھالا ہے الحمدللہ نیشنل پارک سمیت محکمہ جنگلات میں ٹمبرچوری کی وارداتیں ختم ہوچکی ہیں جس کی رپورٹ سیکرٹری اور چیف کنزرویٹر،اور حکمومت پنجاب تک معلوم ہے،انہوں نے کہا کہ ہم کسی بھی فاریسٹ گارڈ،بلاک افسر کو ڈسمس اس وقت تک نہیں کرسکتے جب تک اس پر لگائے جانے والے تمام الزامات دوران انکوائری ثابت نہیں ہوجاتے،انکوائری کے دوران الزام یافتہ کو معطل کیا جاتا ہے اس کے بعد انکوائری بٹھا دی جاتی ہے،جو ملازم برطرف کیے گئے تھے انہیں کورٹ نے بحال کردیا ہے،ان کے خلاف انکوائری جاری ہے الزام ثابت ہونے پر محکمانہ کاروائی کی جائیگی،انہوں نے کہا کہ میں آیئن اور قانون کے دائرے میں راہ کر کاروائی کرتا ہوں اگر کوئی فاریسٹ گارڈ یا بلاک افسر ٹمبرچوری میں ملوث پایا جاتا ہے تو اس کے خلاف ثبوت آنے پر کاروائی بھی کی جاتی ہے،میں کوئی فاریسٹ گارڈ یا بلاک افسر نہ ہوں کہ جہاں لکڑی چوری ہویاٹمبرچوری ہومیں وہاں موقع پر پہنچوں میں کنذرویٹر کے عہدے پر ہوں میرے پاس آنے والی شکایات کا بروقت نوٹس لیتا ہوں اور اس کی رپورٹ ڈی ایف اوسے طلب کرتا ہوں بدعنوان فاریسٹ گارڈ بلاک افسران کے خلاف ڈی ایف او ہی کاروائی کرتے ہیں،انہوں نے چیلنج کیا کہ میرے اوپرایک ڈھیلے کی کرپشن بھی ثابت ہوجائے تو میں اپنے آپ کو احتساب کیلئے پیش کردونگا،میں نے ہمیشہ ایمانداری سے سروس کی ہے آج تک کسی جگہ سے ایک روپئے کا بھی روادار نہ ہوں،