خاتون نے اپنی 3 سوتیلی بیٹیوں کو جوش بڑھانے والی ادویات کھلانا شروع کردیں اور پھر ۔۔۔

علی گڑھ : بھارتی ریاست اتر پردیش میں ایک خاتون پر اپنی ہی سوتیلی بیٹیوں کو جنسی ہراساں کرنے کے الزام کے تحت گرفتار کیا گیا ہے۔

علی گڑھ سے تعلق رکھنے والی 19 سالہ بی ایس کی طالبہ نے پولیس کو دی گئی درخواست میں بتایا کہ اس کی سوتیلی ماں ہم جنس پرست ہے اور ہم تین بہنوں کو جوش بڑھانے والی ادویات کھلا کر جنسی ہراساں کرتی ہے۔

متاثرہ کے مطابق اس کی والدہ کی موت کے بعد اس کے والد کی 45 سالہ خاتون سے فیس بک پر ملاقات ہوئی جس کے بعد دونوں نے 2019 میں ویلنٹائن ڈے پر شادی کرلی۔ ملزمہ نے خود کو نرس ظاہر کیا اور رات کے کھانے کے بعد مخصوص گولیاں سب کو کھلانا شروع کردیں اور کہا کہ یہ صحت کیلئے مفید ہیں۔ یہ گولیاں کھانے کے بعد لڑکی کے والد، دادا اور دادی گہری نیند میں چلے جاتے جبکہ تینوں بہنوں کا جنسی جوش بڑھ جاتا جس کے بعد ان کی سوتیلی ماں انہیں فحش فلمیں دکھاتی اور انہیں ہراساں کرتی۔

ضرور پڑھیں   مالک مکان کی کرائے دار لڑکی سے زیادتی، ویڈیو بنائی اورپھر بلیک میل کرکے ایسا گھناوناکام کروایا کہ ہرشخص تلملا اٹھے

پولیس نے درخواست ملنے کے بعد ملزمہ سوتیلی ماں کو گرفتار کرلیا ہے۔ پولیس تحقیقات میں انکشاف ہوا کہ خاتون کی یہ چوتھی شادی ہے، اس کی پہلی شادی 2005 میں دلی کے ایک شخص سے ہوئی تھی جس کی موت کے بارے میں قتل کا شبہ ظاہر کیا گیا اور اس کیس میں بھی یہ جیل جاچکی ہے۔