شادی کے 22 ماہ بعد بھی کنوارہ رہنے والے مرد نے تنگ آکر خود کشی کرلی

نئی دہلی : بھارت میں جنسی کمزوری پرڈپریشن میں مبتلا ہو کر ایک شخص نے خودکشی کر لی۔ میل آن لائن کے مطابق یہ واقعہ بھارتی ریاست گجرات کے شہر مانی نگر میں پیش آیا ہے جہاں سرندرپارمر نامی شخص نے خود کشی کی۔ بتایا گیا ہے کہ سرندر جنسی کمزوری کا شکار تھا اور اپنی بیوی کے ساتھ ازدواجی فرائض ادا کرنے سے قاصر رہتا تھا جس کی وجہ سے ڈپریشن میں مبتلا ہو کر اس نے یہ انتہائی قدم اٹھا لیا۔تاہم سرندر کی ماںنے اپنے بیٹے کی موت کا ذمہ دار اپنی 32سالہ بہو گیتا پارمر کو ٹھہراتے ہوئے اس کے خلاف مقدمہ درج کروا دیا ہے۔

ضرور پڑھیں   مقبوضہ کشمیرمیں بھارتی جارحیت سے مزید 2 کشمیری شہید

سرندر کی 55سالہ ماں مولی پارمر نے پولیس کو بتایا کہ”میرا بیٹا جنسی کمزوری کا شکار نہیں تھا بلکہ میری بہو کو یہ شادی پسند نہیں تھی اور اس نے شادی کے وقت ہی قسم کھائی تھی کہ وہ میرے بیٹے کے ساتھ جنسی تعلق قائم نہیں کرے گی۔ میں کئی بار اپنے بیٹے اور بہو کے کمرے میں گئی اور انہیں الگ الگ بستروں میں سوتے دیکھا۔

مجھے میرے بیٹے نے خود بتایا کہ شادی کے بعد ان دونوں کے درمیان کبھی جسمانی تعلق قائم نہیں ہوا، کیونکہ اس کی بیوی ایسا نہیں چاہتی۔میرے بیٹے کی شادی کو22ماہ ہو گئے تھے اور اس تمام عرصے میں میری بہو میرے بیٹے کو شدید ذہنی اذیت پہنچاتی آ رہی تھی جس پر وہ ڈپریشن کا مریض بن کر رہ گیا۔ میری بہو نے ہی اسے خودکشی کی طرف راغب کیا۔ “واضح رہے کہ سرندر کی یہ دوسری شادی تھی۔ اس نے پہلی بیوی کے ساتھ طلاق ہونے پر گیتا کے ساتھ اکتوبر 2018ءمیں دوسری شادی کی تھی۔ پولیس کیس کی تحقیقات کر رہی ہے۔