ٹک ٹاک نے امریکہ کو دھمکی دے دی

چین : ٹک ٹاک نے امریکہ کو دھمکی دے دی۔ ڈونلڈ ٹرمپ کی پابندی کی باتیں اور عندیے کے بعد اب ٹک ٹاک انتظامیہ بھی حرکت میں آ گئی ہے جس کے بعد ٹک ٹاک نے امریکہ کو دھمکی دے دی ہے۔ اس بارے میں ٹک ٹاک انتظامیہ کی جانب سے کہا گیا ہے کہ ہم اس بات کو واضح کرچکے ہیں کہ ٹک ٹاک نے کبھی چینی حکومت سے صارفین کا ڈیٹا شیئر نہیں کیا اور نہ ہی حکومت کی درخواست پر کسی مواد کو سینسر کیا گیا، ہم تمام قانونی راستے اختیار کریں گے۔

ان کی جانب سے مزید کہا گیا ہے کہ امریکی صدر کا ایگزیکٹو حکم نامہ اب تک امریکی حکومت کا سب سے سخت رد عمل ہے، ایگزیکٹو آرڈر نامعلوم رپورٹس کی بنیاد پر جاری کیا گیا جس میں ان کا ذکر ہی نہیں۔ تاہم ٹک ٹاک انتظامیہ نے قانونی راستہ اختیار کرتے ہوئے ہر ممکن اقدام کا اعلان کیا ہے۔

ضرور پڑھیں   پاکستان میں دہشتگردی ،بھارتی حکومت کی جانب سے ردعمل آگیا، عمران خان کو پیشکش کرڈالی

یاد رہے کہ اس سے قبل بھارت کے بعد امریکہ کا بھی ٹک ٹاک پر جاسوسی کا الزام سامنے آیا تھا۔

ڈونلڈ ٹرمپ نے ایپ پر پابندی کا عندیہ دے دیا تھا، اس حوالے سے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے اس خطرے کا اظہار کیا گیا تھا کہ چین ٹک ٹاک کے ذریعے جاسوسی کر سکتا ہے۔ ان کی جانب سے مزید کہا گیا تھا کہ میری انتظامیہ قومی سلامتی اور سنسرشپ کے خدشات کا حوالہ دیتے ہوئے مختصر ویڈیو بنانے والی ایپ کے خلاف کارروائی پر زور دے رہی ہے۔ اس سےقبل ایک اعدادوشمار کے مطابق امریکہ میں 2020 کے پہلے تین ماہ میں 315 ملین افراد نے ٹک ٹاک ایپ ڈاون لوڈ کی تھی۔

ضرور پڑھیں   سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کو گرفتار کرلیا گیا

اس سے قبل بھارت نے بھی چینی ویڈیو شیئرنگ ایپ ٹک ٹاک سمیت 50 سے زائد موبائل ایپلی کیشنز کو بلاک کردیا۔ میڈیارپورٹس کے مطابق گزشتہ دنوں لداخ کی گلوان وادی میں چینی فوج کے ہاتھوں بھارتی فوج کی درگت اور اپوزیشن کے سخت ردعمل پر بھارتی حکومت دباؤ کا شکار ہے اور اب بھارت نے عوامی غم و غصہ ٹھنڈا کرنے کے لیے چینی موبائل ایپلی کیشنز پر پابندی عائد کردی ہے۔

بھارتی مرکزی حکومت نے ملک میں 59 چینی موبائل ایپس کو بلاک کردیا ہے جس میں مشہور ویڈیو شیئرنگ ایپ ٹک ٹاک، یوسی براؤزر، سی ایم براؤزر، بیوٹی پلس اور دیگر شامل ہیں۔ تاہم بھارت کے اس فیصلے کے بعد سوشل میڈیا پر بھارتی حکومت کو تنقید کا سامنا بھی کرنا پڑا تھا جبکہ 2 ٹک ٹاکرز نے خودکشی بھی کر لی تھی۔ بھارتی ریاست اترپردیش کے شہر میرٹھ میں 22 سالہ طالبہ نے اپنی زندگی کا خاتمہ کر لیا تھا۔

ضرور پڑھیں   پاکستان میں کورونا کیسز کی یومیہ تعداد گھٹ کر ایک ہزار پر آگئی

سندھیا چوہان کے بارے میں معلوم ہوا ہے کہ وہ ٹک ٹاک پر پابندی سے کافی مایوس بھی تھی۔لاک ڈاؤن کے باعث سندھیا چوہان دہلی یونیورسٹی بند ہونے کے بعد میرٹھ کے علاقے میں واقع اپنے گھر پر تھی۔گزشتہ شام اس نے کمرے میں خود کو بند کر کے گلے میں پھندا لگا کر خود کشی کرلی۔