معروف صحافی مطیع اللہ جان کے اغواء ہونے کی فوٹیج مںظرعام پر آگئی

اسلام آباد : معروف صحافی مطیع اللہ جان کے اغواء ہونے کی فوٹیج مںظرعام پر آگئی ہے۔ تفصیلات کے مطابق معروف صحافی آج اچانک غائب ہو گئے تھے جس کے بعد ان کی گاڑی مل گئی ہے، اہلخانہ نے لاپتہ ہونے کی تصدیق کر دی۔ تاہم اب ایک فوٹیج منظرعام پر آئی ہے جس میں دیکھا گیا ہے کہ مطیع اللہ جان کو کچھ افراد نے آ کر اغوا کیا ہے۔

کسی افراد کی شناخت نہیں کی جا سکی، لیکن اس فوٹیج میں دیکھا گیا ہے کہ انہیں کچھ لوگوں کے گروہ نے ایک دم سے آ کر پکڑ لیا تھا جس کے بعد وہ لاپتہ ہو گئے ہیں۔

علاوہ ازیں انڈپینڈنٹ اردو کے مطابق صحافی مطیع اللہ جان کی اہلیہ نے تصدیق کی ہے کہ ان کے شوہر لاپتہ ہیں۔ اہلیہ کے مطابق مطیع اللہ جان نے انہیں آج صبح سکول چھوڑا تھا جس کی بعد ان کی گاڑی مل گئی ہے جس میں چابی لگی ہوئی ہے۔

واضح رہے کہ کچھ روز قبل صحافی مطیع اللہ جان کیخلاف توہین عدالت کی درخواست بھی دائر کی گئی تھی جسے اسلام آباد ہائیکورٹ نے مسترد کر دیا تھا۔ اسلام آباد ہائیکورٹ کے چیف جسٹس اطہر من اللہ کی عدالت نے صحافی مطیع اللہ جان کے خلاف دائر توہین عدالت کی درخواست ناقابل سماعت قرار دیتے ہوئے مسترد کیا تھا۔چیف جسٹس نے وکیل سے استفسار کیا کہ آپ کیسے متاثرہ ہیں ؟پاکستان بار کونسل اور اسلام آباد بار کونسل کا فورم آپ کے پاس موجود ہے۔

عام شہری اور سیاسی جماعتیں بھی سوشل میڈیا استعمال کرتی ہیں ۔کیا ہر ایک کے خلاف توہین عدالت شروع کریں۔ ججز اور عدلیہ کو اس سے اوپر ہونا چاہئے ۔عدالت نے وکیل کے دلائل سننے کے بعد فیصلہ محفوظ کیااور بعدازاں فیصلہ جاری کرتے ہوئے عدالت نے صحافی مطیع اللہ جان کے خلاف توہین عدالت کی درخواست ناقابل سماعت قرار دیتے ہوئے مسترد کردیا۔