امریکی صدر کا داماد پی آئی اے کے ہوٹل کو “ٹرمپ ٹاور” بنانے کا خواہشمند تھا

اسلام آباد : سینئر صحافی ڈاکٹر شاہد مسعود کا کہنا ہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے داماد پی آئی اے کے ہوٹل کو ٹرمپ ٹاور بنانا چاہتے تھے۔تفصیلات کے مطابق حکومت کی جانب سے پی آئی اے کی نجکاری کو روک دیا گیا ہے۔اسی حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے سینئر صحافی ڈاکٹر شاہد مسعود کا کہنا ہے کہ پی آئی اے کے اوپر روزانہ پریس کانفرنس ہو رہی ہیں،روزازنہ وضاحتیں دی جا رہی ہیں لیکن شکر ہے یہ معاملہ بھی حل ہوگیا ہے۔

اس کے حوالے سے کھل کر بات کرنی چاہیے۔پی آئی اے کے ہوٹل کے حوالے سے ٹرمپ کے داماد سے بات ہوئی تھی جو اسے ٹرمپ ٹاور بنانا چاہتے تھے۔لیکن اچھی بات ہے کہ عمران خان صاحب نے اس کو روک لیا ہے۔ڈاکٹر شاہد مسود نے مزید کیا کہا ویڈیو میں ملاحظہ کیجئے :

خیال رہے کہ کابینہ کمیٹی برائے نجکاری نے روز ویلٹ ہوٹل کی نجکاری سے متعلق ٹاسک فورس کو ڈی نوٹیفائی کرنے کا فیصلہ کرلیا ۔

جمعرات کو مشیر خزانہ ڈاکٹر عبدالحفیظ شیخ کی زیر صدارت کابینہ کمیٹی برائے نجکاری کا اجلاس ہوا جس میں روز ویلٹ ہوٹل نیویارک کے مستقبل کے حوالے سے تجاویز پر غور کیا گیا ۔ اجلاس میں روز ویلٹ ہوٹل کی نجکاری سے متعلق ٹاسک فورس کو ڈی نوٹیفائی کرنے کا فیصلہ کیا گیا ۔ اجلاس میں ایوی ایشن ڈویژن کی سفارشات کی روشنی میں ٹاسک فورس ڈی نوٹیفائی کرنے کا فیصلہ ہوا،ٹاسک فورس وزیر نجکاری کی زیر صدارت قائم کی گئی تھی۔

اجلاس میں میسرز ڈیلوئیٹ رپورٹ کی روشنی میں پی آئی اے روز ویلٹ ہوٹل کی نج کاری نہ کرنے کا فیصلہ کیا گیا ،اجلاس میں روز ویلٹ ہوٹل کو جوائنٹ وینچر کے ساتھ چلانے کا فیصلہ کیاگیا ۔ کمیٹی نے عزم کااظہار کیا کہ روز ویلٹ ہوٹل کے بارے میں تمام فیصلے میرٹ پہ کئے جائیں گے، وزارت نجکاری کو بورڈ سے مشاورت کے بعد مالیاتی مشیروں کی نامزدگی کا کام شروع کرنے سے متعلق ہدایات دی گئی گئیں ۔