سوتیلے باپ اور چچا کی کمسن بچی کے ساتھ اجتماعی زیادتی

کراچی : سوتیلے باپ اور چچا نے کمسن بچی کو زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا۔تفصیلات کے مطابق کراچی میں ایک شرمناک واقعہ پیش آیا ہے جہاں بچی کو اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنایا گیا۔کراچی کی عوامی کالونی میں سوتیلے باپ اور چچا نے بچی کے ساتھ زیادتی کی۔متاثرہ بچی اپنی والدہ اور سوتیلے باپ کے ساتھ ایک گھر میں رہتی تھی۔

متاثرہ بچی نے الزام عائد کیا ہے کہ سوتیلے والد اورچچا نے تشدد کرکے زیادتی کی۔۔متاثرہ بچی نے پولیس کو بیان ریکارڈ کروایا ہے کہ میرے سوتیلے والد نے زیادتی کی اور تشدد کا نشانہ بنایا۔ اس حوالے سے پولیس نے میڈیا کو تفصیلات سے آگاہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ پولیس نے فوری کارروائی کرتے ہوئے بچی کے سوتیلے والد اور چچا کو حراست میں لے لیا ہے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ متاثرہ بچی کا اسپتال سے میڈیکل کرایا جائے گا۔میڈیکل رپورٹ سامنے آنے کے بعد مزید کارروائی آگے بڑھائی جائے گی۔جبکہ بچی کے گرفتار سوتیلے والد نے بچی پر تشدد کا اعتراف کرلیا ہے۔جب کہ ملزم سوتیلے والد کا کہنا ہے کہ محلے کے ایک لڑکے نے پیسے دے کر بچی کے ساتھ زیادتی کی تھی۔محلے کے لڑکے اور بیٹی پر اسی بات پر تشدد کیا،بچی کی ماں کو بھی معلوم ہے کہ زیادتی کس نے کی ہے۔

پولیس حکام نے بچی کی والدہ کو بھی بیان اور تفتیش کے لیے طلب کرلیا ہے۔دوسری جانب سرگودھا کے قصبہ مڈھ رانجھا کے گاوں نصیرپورکلاں میں 13سالہ بچے کیساتھ تین افراد کی اجتماعی زیادتی کا مقدمہ درج کر کے پولیس نے تینوں ملزمان کو گرفتار کر لیا۔ذرائع کے مطابق سرگودھا کی تحصیل کوٹ مومن کے قصبہ مڈھ رانجھا کے گاوں نصیرپورکلاں میں خاتون منوراں بی بی کے 13 سالہ بیٹے فصیح کو کسی کام کا بہانہ بنا کر علاقہ کے عرفان نے گھر سے ہمراہ لیا اور دوست کی بھیتک میں لیکر ساتھیوں عادل اور تنویر کے ہمراہ اجتماعی طور پر بدفعلی کا نشانہ بنایا اور بچے کے شور مچانے پر لوگوں کے متوجہ ہوتے ہی ملزمان بچے کو حالت غیر میں چھوڑ کر فرار ہو گئے اور بچہ کمرے سے نکل کر گلی میں بیہوش ہو گیا، پولیس تھانہ مڈھ رانجھا نے بچے کو میڈیکل کیلئے ہسپتال بجھواتے ہوئے بچے کی ماں منوراں بی بی کی مدعیت میں تینوں ملزمان کے خلاف اجتماعی زیادتی کے الزام میں زیر دفعہ 377 ت پ مقدمہ درج کر لیا اور ملزمان کو گرفتار کر کے مصروف تفتیش ہے۔