پاکستانیوں نے ٹڈی دَل کو مشکل میں ڈال دیا ، ایک رات میں ہزاروں روپے کما لئے

لاہور : پاکستانیوں نے ٹڈی دَل کو مشکل میں ڈال دیا ، سندھ میں ٹڈی دل سے مزیدار کھانے بننے لگے تو پنجاب میں شہری مرغیوں اور مچھلیوں کی خوارک تیار کرنے والی فیکٹریوں کو بیچنے لگے۔ دیکھا جائے تو ٹڈی دل دیہات میں آفت بن کر ٹوٹی ہے جس نے چندہی منٹوں میں کئی ایکڑ فصلوں کا صفایا کر دیا ہے۔ جہاں حکومتی سطح پر ٹڈیوں کی تدارک کیلئے کام کیا جارہا ہے وہی پر عوام بھی سرگرم آتی ہے۔

سندھ کے علاقوں میں ان ٹڈیوں سے مزیدار کھانے بنائے جانے لگے ہیں۔ تاہم پنجاب کے لوگ اس سے بھی آگے نکل گئے اور اوکاڑہ کی ایک تنظیم کا ٹڈی دل کے تدارک کیلئے کیا گیا تجربہ انتہائی کامیاب رہا ۔ اس تنظیم نے لوگوں سے 20 روپے کلو کے حساب سے ٹڈیاں خرید کر مچھلیوں اور مرغیوں کے کارخانے کو بیچنے کا کام شروع کیا۔

ضرور پڑھیں   حکومت شوگر ملز کے ہاتھوں یرغمال ھے تجزیہ رفیق ساجد

اور بتایا گیا ہے کہ صرف ایک رات میں ہی ٹڈیاں جمع کرنے والے ہر شخص نے 20 ہزار روپے کما لئے۔

اس حساب سے ایک شخص ایک ماہ میں 6 لاکھ روپے تک کما سکتا ہے۔ بتایا گیا ہے کہ ٹڈی رات کے وقت جھنڈ کی شکل میں جمع ہو جاتی ہیں جس کے باعث ان کو پکڑنا آسان ہو جاتا ہے۔ تاہم ٹڈی دل کے حملے بھی جاری ہیں۔ اب تک پورے ملک میں 5لاکھ 2 ہزار 200 ہیکٹرز رقبہ پر سپرے کیا جا چکا ہے۔ نیشنل ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی کے ترجمان کے مطابق اس وقت ملک کے 51 اضلاع میں ٹڈی دل موجود ہے۔

ضرور پڑھیں   افغان مذاکرات کے تمام فریقین تحمل سے کام لیں، دفتر خارجہ

بلوچسستان میں 33، خیبر پختونخوا میں 3، پنجاب میں 3 اور سندھ میں 6 اضلاع متاثر ہوئے ہیں۔ ٹڈی دل کے حملہ ذدہ علاقوں کا سروے اور کنٹرول آپریشن جاری ہے۔ترجمان کے مطابق کل 1122 ٹیموں لوکسٹ کنڑول آپریشن میں حصہ لیا۔ گذشتہ 24 گھنٹوں میں 3لاکھ 68 ہزار ہیکٹر رقبہ کا سروے اور 5300 ہیکٹر رقبہ کا ٹڈی مار ادویات سے ٹریٹمنٹ کیا گیا۔