ٹرپل ایم اے رکشہ ڈرائیور ایسے کام صرف پاکستان میں

قصور رفیق ساجد بیورو نوائے جنگ ۔شاعر ادیب اور رائٹرز ملک کا سرمایہ ھوتے ہیں اور یہ امن کے سفیر بہت احساس دل کے مالک ان کو بھی روزگار چائیے جس ملک کے وقت حاکم کے دور میں شاعر ادیب اور رائٹرز رکشہ چلا کر روزگار کمائے اس حاکم سے بھی کچھ بھول ھوئی ھے

اپنا تبصرہ بھیجیں