نواز شریف کو کئی بیماریاں لاحق ہیں جن کا علاج ضروری ہے، ڈاکٹرز

لاہور: پی آئی سی کے 3 رکنی بورڈ کا کہنا ہے کہ نواز شریف کو بیشتر بیماریاں ہیں جن کا علاج ضروری ہے۔

سپرنٹنڈنٹ جیل کی ہدایت پر پی آئی سی کے تین رکنی بورڈ نے نواز شریف کا معائنہ کیا۔ تین رکنی بورڈ میں پروفیسر شاہد حمید، ڈاکٹر ساجد اور ڈاکٹر حامد خلیل شامل تھے۔ سابقہ میڈیکل ریکارڈ نہ ہونے کی بنا پر میڈیکل بورڈ نے ضروری ٹیسٹ تجویز کر دیئے ہیں۔

میڈیکل بورڈ کا کہنا ہے کہ سابق وزیراعظم کو رات کے وقت دونوں بازوؤں میں شدید درد کا سامنا تھا اور رات کے وقت پاؤں کے انگوٹھے میں درد بھی رہتا ہے، اسپیشل میڈیکل بورڈ نے نواز شریف کی ادویات کا معائنہ، ای سی جی اور دیگر ٹیسٹ کیے ہیں۔
میڈیکل بورڈ نے معائنہ کرنے کے بعد کہا ہے کہ ٹیسٹس کے مطابق نواز شریف 18 سال سے دل کے عارضے اور 10 سال سے شوگر اور بلڈ پریشر کے مرض میں مبتلا ہیں، 2 بار انجیو پلاسٹی اور 2 دفعہ اوپن ہارٹ سرجری بھی ہوچکی ہے اور اس وقت نواز شریف کو بیشتر بیماریاں ہیں جن کا علاج ضروری ہے۔

میڈیکل بورڈ نے تجاویز میں کہا ہے کہ سابق وزیر اعظم کی ایکو کارڈیو گرافی، اسٹریس تھیلیم اور ٹی آر او پی کے ٹیسٹ کی رپورٹ اور سابقہ ریکارڈ دیکھنے کے بعد مزید علاج و معالجے کا فیصلہ کیا جا ئے گا۔