وزیراعظم نے 5 سالہ اقتصادی منصوبہ بندی کی منظوری دے دی

اسلام آباد: وزیر اعظم نے قومی اقتصادی حکمت عملی کے تحت 5 سالہ منصوبہ بندی کی منظوری دیتے ہوئے اس پر جلد عمل درآمد شروع کرنے کی ہدایت کردی اور کہا کہ اقتصادی استحکام کے ذریعے غربت پر قابو پانے میں مدد ملے گی۔

ایکسپریس نیوز کے مطابق وزیر اعظم عمران خان کی زیر صدارت ملکی معیشت سے متعلق اہم اجلاس منعقد ہوا جس میں وزیر خزانہ اسد عمر، گورنر اسٹیٹ بینک، سیکریٹری خزانہ، وزیراعظم کے معاون خصوصی ڈاکٹر اشفاق حسین اور اقتصادی ماہرین نے بھی شرکت کی۔ اجلاس میں ملک کی اقتصادی صورت حال سے متعلق ایکشن پلان پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

اجلاس میں وزیراعظم نے قومی اقتصادی حکمت عملی کے تحت پانچ سالہ منصوبہ بندی کی منظوری دیتے ہوئے اس پر جلد عمل درآمد شروع کرنے کی ہدایت کی۔
گورنر اسٹیٹ بینک نے وزیراعظم عمران خان کو بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ پاکستان بینکنگ سہولیات سے سب سے کم استفادہ کرنے والے ممالک میں شامل رہا ہے، ملک کی صرف 16 فیصد آبادی بینکنگ سہولیات استعمال کر رہی ہے اسی طرح ملک بھر کی خواتین کا صرف گیارہ فیصد حصہ بینکنگ سسٹم استعمال کرتا ہے، عوام کی کثیر تعداد مذہبی رجحان کی وجہ سے بینکنگ نظام سے دور ہے۔

گورنر اسٹیٹ بینک نے بتایا کہ آئندہ 5 برس کے لیے جامع پلان بنایا جا رہا ہے، اسلامک بینکنگ اور ڈیجیٹل پیمنٹ کو فروغ دیا جائے گا، 5 سالہ منصوبہ بندی کے تحت 30 لاکھ روزگار کے مواقع پیدا کریں گے، ایس ایم ای نظام کے تحت 5 اعشاریہ 5 بلین ڈالر کی ایکسپورٹس بڑھیں گی جب کہ کمرشل اور مائیکرو فائنانس بینکنگ پر کام تیز کیا جائے گا۔