بھارت:کورونا مریض کا ساتھی مریضہ سے زیادتی کا معاملہ،پاس کھڑا نوجوان ویڈیو بناتا رہا

نئی دہلی : گذشتہ روز بھارت کے شہر نئی دہلی میں ایک واقعہ پیش آیا ہے جہاں قرنطینہ سینٹر میں ایک کورونا مریض نے اپنی ساتھی مریضہ سے زیادتی کی کوشش کی ۔ پولیس کے مطابق یہ واقعہ رات کے اوقات میں اس وقت پیش آیا جب لڑکی واش روم گئی تو اس دوران اسی قرنطینہ سینٹر میں زیر علاج 19 سالہ نوجوان نے اپنے ساتھی کے ساتھ اسے واش روم میں زیادتی کا نشانہ بنانے کی کوشش کی۔

مزید بتایا گیا ہے کہ 14 سالہ لڑکی چترپور کو کورونا کی تصدیق ہونے کے بعد قرنطینہ میں رکھا گیا تھا جہاں اس کے ساتھ زیادتی کی کوشش کی گئی ہے۔ پولیس کی جانب سے ابتدائی تحقیقاتی رپورٹ میں بتایا گیا ہے قرنطینہ سینٹر میں ملزم لڑکا اور متاثرہ لڑکی دونوں کو ان کے گھر والوں کے ساتھ رکھا گیا تھا، واقع پیش آنے کے بعد لڑکی نے جا کر سارا واقع ایک رشتہ دار کو بتایا جو اسی سنٹر میں زیر علاج تھا، جس کے بعد پولیس کو اطلاع دی گئی۔

ضرور پڑھیں   ترکی نے امریکا سے مذاکرات کے بعد کردوں کے خلاف فوجی آپریشن روک دیا

متاثرہ لڑکی نے پولیس کو بیان جمع کرواتے ہوئے بتایا ہے کہ اس کے ساتھ دو لڑکوں نے زیادتی کی کوشش کی، ایک لڑکا زبردستی کر رہا تھا جبکہ دوسرا ساتھی ویڈیو بنا رہا تھا۔ تاہم پولیس کا کہنا ہے کہ لڑکی کے ساتھ ایک نوجوان کی طرف سے زیادتی کی کوشش کی جب کہ پا س موجود دوسرا نوجوان تمام مناظر کو موبائل فون میں ریکارڈ کرنے کی کوشش کر رہا تھا۔ پولیس نے لڑکی کے بیان کی روشنی میں مقدمہ درج کرکے دونوں نوجوانوں کو گرفتار کرلیا ہے اور ان سے مزید تفتیش جاری ہے۔

پولیس سے وہ موبائل فون بھی قبضے میں لے لیا جس سے ویڈیو بنائی گئی۔واقعے کے بعد متاثرہ لڑکی کو دوسرے کورونا سنٹر منتقل کر دیا گیا۔جب کی دیگر دو مریض جنہوں نے زیادتی کی کوشش کی ،انہیں جیل منتقل کر تو دیا گیا ہے تاہم وہیں پر ان کا علاج بھی کیا جائے گا۔