دیامر بھاشا ڈیم کی تعمیر کے بعد بھارتی میڈیا بوکھلاہٹ کا شکار

بھارت : دیامر بھاشا ڈیم کی تعمیر کے بعد بھارتی میڈیا بوکھلاہٹ کا شکار ہو گیا۔ بھارتی اینکر نے لائیو شو میں پاکستان اور وزیراعظم عمران خان کے خلاف نا مناسب الفاظ استعمال کر کے تہذیب کا دامن چھوڑ دیا ہے۔ بوکھلاہٹ کے شکار میڈیا نے چین کے اشتراک سے بننے والے دیامر بھاشا ڈیم کو پاکستان کے لیے سب سے بڑا “کلنک” قرار دے دیا ہے۔

بھارتی اینکر کا بات کرتے ہوئے کہنا تھا کہ چین لداخ میں بھارتی سپاہیوں کے ہاتھ اپنی دھرگت بنوانے کے بعد اب بلوچستان میں پاکستان کے ساتھ ڈیم بنا رہا ہے، ے جس کا بھارت کی جانب سے “ورود” بھی کیا گیا، بھارتی اینکر بار بار اپنی انتہا پسند حکومت کو خوش کرنے کے لئے پاکستان کے وزیراعظم عمران خان کو “لنگڑا خان” کہہ کر مخاطب کرتا رہا۔

ضرور پڑھیں   مقبوضہ کشمیر میں قابض فوج نے حاملہ خاتون کو شہید کردیا

تاہم دوسری جانب سب کو اس بات کا علم ہے کہ لداخ میں چین نے کس طرح بھارتی فوج کے دانت کھٹے کر دیئے تھے۔ بھارتی اینکر کی جانب سے مزید کہا گیا ہے کہ پاکستانی وزیراعظم عمران خان نے دیام،یر بھاشا ڈیم کا دورہ بھی کیا جہاں انہوں نے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ پاکستان کا سب سے بڑا منصوبہ ہے، لیکن شاید عمران خان اپنی عوام کو یہ بتانا بھول گئے ہیں کہ یہ منصوبہ پاکستان کا سب سے بڑا کلنک ہے۔

بھارتی اینکر کی جانب سے بدتہذیبی کا مظاہرہ کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ عمران خان یہ تو بتا رہے ہیں کہ یہ ڈیم بنانے کا مںصوبہ 50 سال پرانا ہے، لیکن وہ اپنے لوگوں کو یہ نہیں بتا رہے کہ انہوں نے یہ ڈیم چین کو کتنے روپے میں بیچا ہے۔ بھارتی اینکر کی جانب سے جھوٹ کی انتہا تب کی گئی جب اس نے جھوٹ بولتے ہوئے کہا کہ گلگت بلتستان جو ایک متنازع علاقہ ہے اس پر دیامیر بھاشا ڈیم بنانے کے خلاف گلگت بلتستان کی عوام مزاحمت کر رہی ہے، لیکن عمران خان اپنی دوستی نبھانے میں مصروف ہیں، لیکن عمران خان کو یہ نہیں معلوم کہ چینی ڈریگن کس طرح سے ان کے ملک کو نگل جائے گا۔