قطر کے امیر کے بھائی پر امریکہ میں شرمناک ترین الزام لگ گیا، ایسی تفصیلات سامنے آگئیں کہ سن کر ہی شرم سے رنگ لال ہوجائے

نیویارک : قطری امیر کے بھائی شیخ خالد بن حمدکے خلاف امریکہ میں رہتے ہوئے دو امریکی شہریوں کو قتل کرنے کا حکم دینے کے الزام کے تحت مقدمہ چل رہا ہے۔ اب اس حوالے سے ان پر مزید سنگین الزامات عائد کر دیئے گئے ہیں۔ میل آن لائن کے مطابق شیخ خالد پر لگنے والے نئے الزامات میں کہا گیا ہے کہ انہوں نے اپنی بیوی کا غصہ ٹھنڈا کرنے کے لیے اپنے ڈرائیور کو تشدد کرکے موت کے گھاٹ اتار دیا تھا۔

دوسرے شرمناک الزام میں کہا گیا ہے کہ انہوں نے منشیات کے نشے میں ڈوب کر ایک مرد جسم فروش پر جنسی حملہ کر دیا تھا۔ شیخ خالد کے خلاف امریکی ریاست میساچوسٹس کی ایک عدالت میں مقدمہ درج کروایا گیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ انہوں نے امریکی زمین پر ہی اپنے سکیورٹی گارڈز کو2 امریکیوں کے قتل کا حکم دیا۔ ان میں ایک مرد اور ایک عورت تھی۔ شیخ خالد کے خلاف یہ مقدمہ ان کے سٹاف میں شامل رہنے والے 6امریکی شہریوں نے دائر کیا ہے۔

ضرور پڑھیں   جو سوتا ہے وہ... امتحان میں اچھے نمبر لیتا ہے!

انہوں نے مقدمے میں کہا ہے کہ شیخ خالد اکثر ایسی پارٹیوں کا انتظام کرتا تھا جن میں منشیات کا استعمال ہوتا تھا۔ وہ زیادہ تر جسم فروش مرد وخواتین کو ان پارٹیوں میں مدعو کرتے تھے۔ ایسی ہی ایک پارٹی میں ایک بار انہوں نے ایک مرد جسم فروش پر جنسی حملہ بھی کر دیا تھا۔ وہ اکثر اپنے سٹاف کو قتل کی دھمکیاں دیا کرتے تھے۔ان کے سٹاف میں شامل رہنے والے ایک میل نرس نے کہا ہے کہ ایک بار وہ میرے سامنے برہنہ ہو گئے تھے اور مجھے شرمناک پیشکش کی لیکن جب میں نے انکار کیا تو مجھے قتل کی دھمکیاں دینے لگے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں