ازدواجی فرائض کی ادائیگی میں آدھے سر کے درد کا علاج پوشیدہ

لندن : دردشقیقہ یا آدھے سر کا درد عام پایا جانے والا عارضہ ہے۔ برطانوی محکمہ صحت کے اعدادوشمار کے مطابق برطانیہ میں یہ ہر پانچ میں سے ایک خاتون اور پر 15میں سے ایک مرد کو لاحق ہوتا ہے۔ اب سائنسدانوں نے اس تکلیف کا حیران کن علاج بتا دیا ہے۔ میل آن لائن کے مطابق نیوروسائنسدان پروفیسر امینڈا الیزن اور ان کی ٹیم نے تحقیق میں یہ معلوم کیا ہے کہ ازدواجی تعلق کی ادائیگی میں دردشقیقہ کا علاج پوشیدہ ہے۔ پروفیسر امینڈا کا کہنا تھا کہ میاں بیوی کے خلوت کے لمحات میں ان کے جسم میں جو ہارمونز پیدا ہوتے ہیں وہ دردشقیقہ کو کم کرنے میں بہت مدد دیتے ہیں۔

ضرور پڑھیں   چقندر کا جوس دل کے مریضوں کے لیے اکسیر قرار

رپورٹ کے مطابق ان ہارمونز میں سیروٹونین، آکسی ٹوسن، ڈوفامین اور دیگر ہارمونز شامل ہیں۔ پروفیسر امینڈا کا کہنا تھا کہ ہماری تحقیق میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ جنسی تعلق دردشقیقہ کے علاج میں مدد دیتا ہے لیکن یہ بات صرف اپنے شریک حیات کے ساتھ جنسی تعلق کے بارے میں ہے۔ ایسا پارٹنر جس کے ساتھ آپ کو محبت ہو اور اس کے ساتھ آپ جذبات طور پر لگاﺅ رکھتے ہوں، اس کے ساتھ جنسی تعلق قائم کرنے سے آپ کو دردشقیقہ سے نجات مل سکتی ہے۔ بصورت دیگر اس درد میں اضافے کا اندیشہ ہو گا،کیونکہ اس صورت میں جسم میں ہارمونز کا اخراج مختلف ہوتا ہے اور ایسے ہارمونز کی پیداوار زیادہ ہوتی ہے جو زیادہ ذہنی دباﺅ کا سبب بنتے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں