75

ایران نے امریکی ڈرون گرا کر بہت بڑی غلطی کی، ٹرمپ

Spread the love

واشنگٹن: ایران کی جانب سے امریکی ڈرون گرانے کے بعد امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ردعمل ظاہر کرتے ہوئے کہا ہے کہ ’ایران نے ہمارا ڈرون گراکر بہت بڑی غلطی‘ کی ہے۔

امریکی حکام کے مطابق آرکیو فور گلوبل ہاک ڈرون آبنائے ہرمز کے اوپر پرواز کررہا تھا جو کسی ملکی کی بجائے بین الاقوامی فضائی گزرگاہ ہے اور اسے زمین سے فضا تک مار کرنے والے ایرانی میزائل۔

دوسری جانب ایران کا مؤقف بالکل مختلف ہے اور اس نے کہا ہے کہ درحقیقت ڈرون طیارے نے اس کی فضائی حدود کی خلاف ورزی کی اور وہ جنوبی ساحلی شہر ہرمزگان کے اوپر پرواز کررہا تھا۔

اس واقعے کے بعد صدر ٹرمپ نے اپنی ٹویٹ میں صرف یہ لکھا ہے کہ ’ایران نے بہت بڑی غلطی‘ کی ہے۔

اس طرح گزشتہ چند دنوں میں خطے میں جاری امریکا ایران کشیدگی میں ایک نیا موڑ پیدا ہوا ہے جس میں پہلی مرتبہ ایران نے امریکا کے خلاف کسی کارروائی کا اعتراف کیا ہے۔ تاریخی لحاظ سے ایران اور امریکا کے درمیان کشیدگی اس وقت بڑھی تھی جب 2015ء میں صدر ٹرمپ نے ایران، امریکا اور دیگر عالمی طاقتوں کے درمیان ایٹمی معاہدے پر یک طرفہ طور پر خود کو اس سے باہر کردیا تھا۔

اس کے بعد واشنگٹن نے ایران پر کئی پابندیاں عائد کردی تھیں اور اس پر ’انتہائی دباؤ‘ ڈالتے ہوئے ایران کو ایٹمی اور میزائل پروگرام سے باز رکھنے کے حربے استعمال کیے تھے۔

پچھلی جمعرات کو خلیجِ عمان میں دو تیل بردار بحری جہازوں کو نشانہ بنایا گیا تھا اور امریکا نے اس کا الزام ایران پر عائد کردیا تھا لیکن ایران نے اس الزام کو مسترد کردیا تھا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں