62

مسلم ليگ (ن) کا اسپيكر قومی اسمبلی اسد قیصر سے استعفے كامطالبہ

Spread the love

مسلم ليگ (ن) نے حكومت كے خلاف بغاوت كا اعلان كرتے ہوئے اسپيكر قومی اسمبلی سے مستعفی ہونے کا مطالبہ كرديا۔

مسلم ليگ ن نے حكومت كيخلاف بغاوت كا اعلان كرتے ہوئے اسپيكر قومي اسمبلي سے استعفے كامطالبہ كیا ہے۔ پارليمنٹ ہاوس كے باہر ميڈيا سے بات كرتے ہوئے مسلم ليگ (ن) كے سنيئر نائب صدر شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہ ہم تو عوام كے مسائل اور مہنگائی كي بات كرنا چاہتے ہيں، ليكن اسپيكر اسمبلی بولنے کی اجازت نہ ديں تو كچھ كرنا پڑتا ہے، اسپيكر قومی اسمبلی ہمارا اعتماد كھو چكے ہيں۔

شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری کی تقرير ميں اسپيكر نے انہیں 3 مرتبہ ٹوكا، اگر اسپيكر اسمبلی عزت دار ہيں اور اگر ان پر عمران خان كا دباؤ ہے کہ وہ گالياں ديتے ہيں تو اسد قیصر اپنے عہدے سے خود مستعفی ہوجائیں، اسپيكر قومی اسمبلی کی عزت اس وقت ہو گی جب آپ ہماری اور اس ہاوس کی عزت كريں گے۔
اس موقع پر مسلم لیگ (ن) کے رکن قومی اسمبلی خواجہ آصف کا کہنا تھا کہ اگر اسپيكر كا يہی رويہ ہے تو ہم ايوان کی كاروائی نہيں چلنے ديں گے اور وزيراعظم كو بھی اس ايوان ميں نہيں بيٹھنے ديں گے، جس شخص کے وزيراعظم سے خصوصی تعلقات ہيں جب وہ كھڑے ہوتے ہيں تو اسپيكر كو كوئی اور نظر نہيں آتا۔ ہم اسپيكر قومی اسمبلی سے خيرات ميں ٹائم نہيں مانگ رہے تقرير كرنا ہمارا حق ہے، حكومت كا رويہ ايوان كو تالا لگانے والا ہے، اس ايوان كو تالا نہ لگوائيں۔

خواجہ آصف نے كہا كہ ٹيكس نادہندہ كو چيئرمين ايف بی ار لگا ديا گیا ہے، حكومت نے ہميں ايف بی آر كا غلام بنا ديا ہے، ہميں يہ غلامی منظور نہيں، ہم اس حكومت كے خلاف بغاوت كا اعلان كرتے ہيں، ايوان تب تک نہيں چلے گا جب تک اپوزيشن کی آواز كو دبايا جاتا رہے گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں