175

پی ٹی آئی حکومت کے لئے ایک اور چیلنج ہم کسی عدالتی فیصلے کو نہیں مانتے اور نہ ہی ہم کسی قانون کو مانتے ہیں ظفروال میں بدنام زمانہ قبضہ گروپ نے قانون کی دھجیاں اڑا دیں ،سینئر صحافی کو سنگین نتائج اور قتل کی دھمکیاں.نمائیندہ نوائےجنگ ظفروال

Spread the love

(نمائندہ نوائے جنگ)ہم کسی عدالتی فیصلے کو نہیں مانتے اور نہ ہی ہم کسی قانون کو مانتے ہیں ظفروال میں بدنام زمانہ قبضہ گروپ نے قانون کی دھجیاں اڑا دیں ،سینئر صحافی کو سنگین نتائج اور قتل کی دھمکیاں ۔تفصیلات کے مطابق سینئر صحافی حاجی محمد عمران باری کی زرعی اراضی پر موضع ننگل سوتکاں میں بدنام زمانہ قبضہ مافیا گروپ نے قانون کی دھجیاں اڑاتے ہوئے زرعی اراضی پر قبضہ کر لیا اور سٹے آرڈر ہونے کے باوجود رات و رات دیوار تعمیر کر لی ۔صبح جب عمران باری اپنے ساتھیوں کے ہمراہ اپنے زرعی فارم پر گیا تو اس نے تعمیر ہوئی دیوار دیکھ کر مقامی پولیس کو15پر اطلاع دی اور قبضہ گروپ کے خلاف کاروائی کرنے کیلئے درخواست کی ۔یاد رہے کہ قبضہ گروپ اس قدر خود کو طاقتور سمجھتے ہیں کہ انہوں نے عدالت عالیہ کی جانب سے دیئے گئے سٹے آرڈر کو بھی کسی خاطر میں نہ لائے اور پولیس نے 15پر کال وصول کرنے کے بعد جب قبضہ گروپ کے ماسٹر مائنڈ محمد سلیم ولد نذیر احمدکو جب پولیس پکڑ کر تھانہ ظفروال لے کر آئی تو معززین شہر کے سامنے محمد سلیم نے S.H.Oظفروال کے سامنے بیٹھ کر یہ وعدہ کیا کہ وہ قانون کی بالادستی کو قائم رکھتے ہوئے مورخہ 18-04-2019تک جو سٹے آرڈر قائم ہے مذکورہ جگہ پر کوئی بھی تعمیر نہیں کریں گے اور جو قبضہ انہوں نے آج کیا ہے اس کو آج ہی ختم کر کے جگہ کو خالی کر دیں گے مگر رات کی تاریکی میں قانون کی دھجیاں اڑاتے ہوئے معززین ظفروال اور S.H.Oظفروال کے سامنے کئے گئے وعدے کی خلاف ورزی کرتے ہوئے سٹے آرڈر شدہ رقبہ پر دیوار کی تعمیر شروع کر دی اس پر جب سینئر صحافی عمران باری نے ان سے پوچھاکہ یہ کام کیوں کیا ہے تو انہوں نے بھڑکیں مارتے ہوئے کہا کہ ہم کسی قانون کو نہیں مانتے اور کونسا S.H.Oاور کونسا اس کے ساتھ کیا گیا قرار ۔اس موقع پر انہوں نے سینئر صحافی کو سنگین نتائج اور قتل کرنے کی دھمکیاں دیں ۔قبضہ گروپ کے سرگناہ کے ساتھ منیر گجر ،شاہد گجر ،مانی گجر اور اویس گجر بھی شامل تھے ۔ظفروال کی تمام صحافی تنظیموں نے آر پی او گوجرانوالہ ، ڈی پی او ناروال اور ڈی ایس پی ظفروال ملک خلیل اور ایس ایچ او تھانہ ظفروال ناصر پنوں سے یہ پر زور مطالبہ کیا ہے کہ ہمارے صحافی بھائی اور سینئر صحافی حاجی محمد عمران باری کی جگہ کو فی الفور قانونی کاروائی کرتے ہوئے وارگزار کروایا جائے اور ملزمان کو گرفتار کر کے قرار واعی سزا دی جائے تا کہ پھر وہ کبھی اس طرح قانون کی دھجیاں اڑائیں اور شریف شہریوں کو پریشان کریں ۔پولیس تھانہ ظفروال نے عمران باری کی درخواست پر مقدمہ درج کر کے ملزمان کی گرفتاری کیلئے چھاپے مار رہے ہیں ۔ محمد عمران باری نمائندہ نوائے جنگ تحصیل ظفروال

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں