167

13 مارچ کو فیس بک اور انسٹاگرام بند ہوئے توسب سے بڑی فحش ویب سائٹ کو اس کا کیا فائدہ ہوا؟ شرمناک انکشاف

Spread the love

نیو یارک: تین روز قبل 13 مارچ کو دنیا بھر میں فیس بک اور انسٹاگرام میں تکنیکی خرابی کے باعث لوگوں کو ان سوشل میڈیا ویب سائٹس تک رسائی میں مسائل کا سامنا کرنا پڑا۔ یہ سوشل میڈیا ویب سائٹس بند ہوئیں تو صارفین نے فحش ویب سائٹس کا رخ کرلیا اور ان پر وقت گزارا۔ فحش مواد کی سب سے بڑی ویب سائٹ کے مطابق جب فیس بک اور انسٹاگرام بند ہوئے تو ان کی ویب سائٹ کی ٹریفک میں 19 فیصد تک کا اضافہ ہوگیا تھا۔

فحش فلموں کی کینیڈین ویب سائٹ نے 13 مارچ کو فیس بک اور انسٹاگرام کے بند ہونے کے بعد اپنی ویب سائٹ پر آنے والی ٹریفک کے اعداد و شمار جاری کیے ہیں۔ فیس بک اور انسٹاگرام کے سرورز میں خلل ایسٹرن ٹائم (کینیڈا اور امریکہ کی مشرقی ریاستوں کا وقت)کے مطابق دوپہر 12 بجے پڑا جو 10 گھنٹے تک جاری رہا۔ جیسے ہی یہ دونوں ویب سائٹس جزوی طور پر بند ہوئیں تو فحش فلموں کی مذکورہ ویب سائٹ کی ٹریفک دوپہر ایک بجے 11 فیصد تک بڑھ گئی جو شام 7 بجے 19 فیصد تک اوپر چلی گئی۔

اس ویب سائٹ پر سب سے زیادہ سرچ انسٹاگرام کے نام سے کی گئی اور اس لفظ کو تلاش کرنے کی تعداد میں 323 فیصد کا اضافہ ہوا۔ اس کے علاوہ ریسلنگ کے لفظ کی تلاش میں 274 فیصد اور فیس بک کی سرچ میں 221 فیصد اضافہ دیکھنے میں آیا۔

کینیڈین فحش ویب سائٹ پر آنے والے صارفین نے اس پر اداکاراﺅں، کھلاڑیوں ، گلوکاراﺅں اور ماڈلز کے نام بھی سرچ کیے۔ ا داکارہ ایملی ریٹا جکووسکی کے نام کی سرچ میں 37 فیصد، گلوکارہ آریانا گرینڈ 32 فیصد،بیلا حدید 19 فیصد ، جی جی حدید 14 فیصداور کرسٹیانو رونالڈو کے نام کی تلاش میں 9 فیصد اضافہ ہوا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں