کشمیریوں کا قتل عام اور برطانیہ میں بھارتی و پاکستانی کشمیری کونسلرز ۔تجزیہ آصف سیلم مٹھا

Spread the love

برطانیہ جیسے انسانی ہمدردی کے علمبردار ملک میں ہنسلو بارو کے سابق مئیر درشن گرے وال کشمیریوں کے قتل عام کے حق میں ۔
تجزیہ ۔آصف سیلم مٹھا ۔NJ NEWS LONDON

اس میں جو لال مفرل والا بندہ ہے اس کا نام درشن گرے وال ہے یہ ہنسلو کا سابق میئر ہے اس کا بیٹا وکرم گرے وال ہنسلو جامع مسجد کی وارڈ سے کونسلر وکرم گرے وال جو کونسلر افضال کیانی اور اسکی کونسلر بیٹی کے گروپ میں تیسرا کونسلر ہے یہ پاکستان ایمبیسی کے سامنے کشمیریوں کے قتل عام کے حق میں احتجاج کر رہا ہے اس جاہل کو یہ نہی پتہ کہ یہ ملکہ کا دیس ہے جہاں سے انسانی حقوق کے حق میں آواز بلند کی جاتی ہے نہ کہ انسانوں کو گارت کرنے کے حق میں آواز بلند کی جاتی ہے یہ درشن گرے وال ہمارے نا عاقبت دوستوں کا جوٹی وال ہے ۔مسجد ہنسلو کے حکمرانوں کے لیئے لمحہ فکریہ ہے نوائے جنگ کے تجزئیے کے مطابق کونسلر افضال کیانی اور انکی بیٹی کو کونسلر شپ سے مستعفی ہو جانا چاہئے کیونکہ انکے پارٹنر کونسلر وکرم درشن گرے وال نے نہتے کشمیریوں کے قتل عام کی حمائت کی ہے اور باقاعدہ پاکستان کے سفارت خانے کے سامنے بلا وجہ احتجاج کیا ہے اور جالندھر کے معروف اخبار میں احتجاج کی فوٹو کے ساتھ مودی سرکار کو خوش کرنے کے لئیے خبر بھی شائع کروائی ہے ۔دیکھنا یہ ہے ہنسلو جامع مسجد جسکی حکمرانی آزاد کشمیر کے نوجوانوں کے ہاتھ میں ہے وہ کیا اقدام اٹھاتے ہیں ۔قاتلین کشمیر کے حامی مردہ باد ۔تجزیہ آصف سیلم مٹھا نوائے جنگ برطانیہ

اپنا تبصرہ بھیجیں