ڈوپ ٹیسٹ مثبت آنے پر احمد شہزاد پر 4 ماہ کی پابندی عائد

لاہور: پاکستان کرکٹ بورڈ نے مثبت ڈوپ ٹیسٹ کا شکار ہونے والے اوپنر احمد شہزاد پر 4 ماہ کی پابندی عائد کردی۔

پی سی بی نے مثبت ڈوپ ٹیسٹ کیس میں قومی کرکٹ ٹیم کے اوپننگ بیٹسمین احمد شہزاد پر 4 ماہ کی پابندی عائد کردی ہے اور اس کا اطلاق 10 جولائی 2018 سے ہوگا۔

ڈوپ ٹیسٹ کے لئے احمد شہزاد کا یورین سیمپل رواں سال 3 مئی کو فیصل آباد میں پاکستان کپ ون ڈے ٹورنامنٹ کے دوران لیا گیا تھا، نتیجہ مثبت آنے پر ریویو بورڈ نے بھی تصدیق کردی تھی کہ اوپنر نے ممنوعہ دوا کا استعمال کیا، پی سی بی نے انہیں 10 جولائی کو چارج شیٹ جاری کرتے ہوئے ہر قسم کی کرکٹ سے معطل کرکے جواب طلب کرلیا تھا۔

احمد شہزاد کو بی سیمپل کا ٹیسٹ کرانے کے لئے 18 جولائی تک بورڈ سے رجوع کرنا تھا لیکن انہوں نے اس حوالے سے رابطہ نہیں کیا، پھر اپنا کیس لڑنے کے لئے بطور وکیل بابراعوان کی خدمات حاصل کرلیں۔ بعد ازاں انہوں نے قانونی جنگ نہ لڑنے کا فیصلہ کر لیا تھا۔

خیال رہے کہ اس سے قبل نومبر 2015میں یاسر شاہ کا آئی سی سی کی جانب سے لیا گیا ڈوپ ٹیسٹ مثبت آیا تھا، لیگ اسپنر یہ ثابت کرنے میں کامیاب ہوگئے تھے کہ انہوں نے غلطی سے اپنی اہلیہ کی بلڈپریشر کی دوا استعمال کرلی تھی، یہ موقف تسلیم کرتے ہوئے انہیں صرف 3 ماہ کے لئے معطل کیا گیا تھا، دوسری صورت میں ان پر 2 سال تک کرکٹ کے دروازے بند ہوسکتے تھے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں