فضل الرحمان کی صدارتی انتخاب میں حمایت کیلیے آصف زرداری سے ملاقات بے نتیجہ ثابت

اسلام آباد: پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین آصف زرداری اور جے یو آئی (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کی ملاقات نتیجہ خیز ثابت نہ ہوسکی، فضل الرحمان صدارتی امیدوار کے لیے اعتزاز احسن کا نام واپس لینے کے لیے آصف زرداری کو قائل نہ کرسکے۔

مطابق صدارتی انتخاب کے حوالے سے سابق صدر آصف زرداری اور مولانا فضل الرحمان کے درمیان ملاقات ہوئی جس میں دونوں رہنماؤں نے ایک دوسرے سے گلے شکوے کیے ۔

ذرائع کے مطابق آصف زرداری نے مولانا فضل الرحمان سے شکوہ کیا کہ مولانا آپ تو ہمارے دوست تھے اب کہاں چلے گئے جس کا فضل الرحمان نے جواب دیتے ہوئے کہا کہ میں تو اپوزیشن کے ساتھ تھا اور ہوں، پیپلز پارٹی نے اے پی سی کے فیصلے کے مطابق شہباز شریف کو ووٹ کیوں نہیں دیا اور اعتزاز احسن کو اپوزیشن کے مشورے کے بغیر کیوں نامزد کیا۔
اس خبر کو بھی پڑھیں : اپوزیشن کا اتحاد نہیں بلکہ محض ایک بندوبست ہے، پیپلز پارٹی

سربراہ جے یو آئی (ف) نے کہا کہ اب بھی وقت ہے مجھے 5 جماعتوں کی حمایت حاصل ہے، پیپلز پارٹی ساتھ دے تو پانسہ پلٹ دیں گے، آصف زرداری نے اعتزاز احسن کو مولانا فضل الرحمان کے حق میں دستبردار کرانے کے لیے وقت مانگتے ہوئے کہا کہ پرسوں تک کاغذات نامزدگی واپس لینے کا وقت ہے پارٹی سے مشورہ کرلوں۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ مولانا فضل الرحمان کی آصف زرداری سے ملاقات بے نتیجہ ثابت ہوئی ہے، پیپلز پارٹی صدارتی امیدوار کے طور پر اعتزاز احسن کا نام واپس لینے کو تیار نہیں جب کہ فرحت اللہ بابر کا کہنا ہے کہ حتمی فیصلہ آج پارٹی کے اجلاس میں کیا جائے گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں