نوازشریف کی ایون فیلڈ ریفرنس کا فیصلہ چند روز تک مؤخر کرنے کی درخواست

لندن:سابق وزیرِاعظم میاں نواز شریف نے احتساب عدالت سے ایون فیلڈ ریفرنس کا فیصلہ محفوظ رکھنے کی درخواست کر دی ہے۔
ہارلے سٹریٹ کلینک لندن کے باہر میڈیا نمائندوں سے گفتگو میں نواز شریف نے کہا کہ بیگم کلثوم نواز وینٹی لیٹر پر ہیں، ڈاکٹرز کے مطابق بیگم کلثوم کی حالت چند دنوں بعد خطرے سے باہر آ جائے گی، میری خواہش ہے کہ انھیں ہوش میں دیکھ لوں، اہلیہ کی بیماری کی سنگین صورتحال کے پیشِ نظر احتساب عدالت سے درخواست ہے کہ وہ فیصلہ چند روز کے لئے محفوظ رکھے۔

نواز شریف کا کہنا تھا کہ معلوم ہے کہ جس مشن کیلئے میں نے جھنڈا اٹھایا وہ آسان نہیں ہے، میں پاکستانی قوم کا نمائندہ ہوں، میں انھیں کبھی مایوس نہیں کروں گا، اگر فیصلہ میرے حق میں آیا یا اگر خلاف آیا، دونوں صورتوں میں پاکستان واپس جاؤں گا، میں کوئی ڈکٹیٹر نہیں جو ڈر کر بھاگ جاؤں، انشا اللہ فتح عوام کا مقدر رہے گی۔

ان کہنا تھا کہ جیپوں والے سمیت عوام کی حکمرانی کا راستہ روکنے والے عبرت کا نشانہ بننے والے ہیں، انشا اللہ فتح عوام کا مقدر بنے گی۔ میں کوئی فوجی ڈکٹیٹر نہیں جو ڈر کر بھاگ جاؤں، بزدلی کا مظاہرہ کر کے قوم کو مایوس نہیں کروں گا، ووٹ کو عزت دو کے مشن میں قوم میرے ساتھ کھڑی ہے، پچیس جولائی کو قوم کا فیصلہ قوم کی تقدیر بدل ڈالے گا۔

سابق وزیرِاعظم نے کہا کہ میں نے اپنے خلاف یکطرفہ کارروائیوں کا سامنا اور ایک سال سے ایسی چیزوں کوبرداشت کیا ہے۔ سابق وزرائے اعظم کیخلاف بھی کیسز تھے لیکن میں نے 100 پیشیاں بھگتیں، کون ہے جس نے اتنی پیشیاں بھگتیں؟ لیکن مشن کی تکمیل کے لیے مصیبتیں برداشت کرنا پڑتی ہیں، میں ہر قربانی کے لیے تیار ہوں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں