اولڈ ہوم بھیجنے پر ضعیف ماں نے بیٹے کو گولی مار کر ہلاک کردیا

ایری زونا: امریکا میں ضعیف العمر ماں نے اولڈ ہوم جانے سے بچنے کے لیے اپنے بیٹے کو گولی مار کر قتل کردیا۔

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق امریکی ریاست ایری زونا میں اولڈ ہوم بھیجے جانے سے ناراض 92 سالہ ماں نے اپنے بیٹے کو گولی مار کر قتل کردیا۔ 72 سالہ بیٹے نے جائے وقوعہ پر ہی دم توڑ دیا۔ عمر رسیدہ ماں خود کو گولی مار کر خودکشی کرنا چاہتی تھیں تاہم بیٹے کی دوست نے ریوالور چھین کر خود کشی کی کوشش کو ناکام بنایا اور پولیس کو مطلع کیا۔

مقتول کی 57 سالہ دوست نے پولیس کو بتایا کہ میں اپنے دوست کے ہمراہ ان کی 92 سالہ بیمار والدہ مسز بلیسنگز کے ساتھ رہتی تھی۔ ہم لوگوں مسز بلیسنگز کے مزاج اور غصے کے باعث انہیں اولڈ ہوم بھیجنا چاہتے تھے تاکہ ان کی بہتر دیکھ بھال اور علاج ہوسکے تاہم انہوں نے سختی سے انکار کردیا اور ایک روز آپے سے باہر ہوکر فائرنگ کرکے اپنے بیٹے کو ہلاک کردیا۔
پولیس حکام کا کہنا ہے کہ 72 سالہ بیٹے کی لاش بیڈ روم سے برآمد کرلی گئی ہے جہاں سے پولیس کو ضعیف ماں کو کیئر ہوم بھیجنے سے متعلق قانونی دستاویزات بھی ملی ہیں۔ خاتون نے اپنے بیٹے کو قتل کرنے کے لیے 1970 میں خریدے گئے ریوالور کا استعمال کیا جو اُن کے شوہر کی ملکیت تھا۔ اپنے کیے پر پشیمان ماں نے پولیس سے سزائے موت کی درخواست کی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں